Read/Present your poetry in Sahityapedia Poetry Open Mic on 30 January 2022.

Register Now
· Reading time: 1 minute

پتھر میں شیشہ جڑا ہے

جگر دیکھ کتنا بڑا ہے
کہ پتھر میں شیشہ جڑا ہے

سدا غیر کی ہر خوشی کو
وہ اپنوں سے اکثر لڑا ہے

لہو سے کل جو تر بتر تھا
مسیحا وہ بن کر کھڑا ہے

ہمیں قد بڑھاکرخوشی ہے
مگر فکر میں وہ بڑا ہے

سلیقہ سے اس کو تراشو
ابھی تو یہ کچا گھڑا ہے

قدم لڑکھڑانے لگے ہیں
بلندی سے پالا پڑا ہے

وفا کا یہی اک سلا ہے
وہ صف میں اکیلا کھڑا ہے

کراے کے پیروں کےدم پر
کوئی آج ہم سے بڑا ہے

2 Likes · 2 Comments · 47 Views
Like
Author
Arshad Rasool फोन : 9411469055/ - जन्म स्थान : बादुल्लागंज, ज़िला बदायूं (उत्तर प्रदेश)। - शिक्षा: एमए, बी एड, एमबीए, ग्रामीण विकास में पीजी डिप्लोमा, मुअल्लिम उर्दू, डिप्लोमा इन जर्नलिज़्म।…

Enjoy all the features of Sahityapedia on the latest Android app.

Install App
You may also like:
Loading...