Read/Present your poetry in Sahityapedia Poetry Open Mic on 30 January 2022.

Register Now
· Reading time: 1 minute

دیکھا پلٹ کے ہمنے تھا چاہت اُسے بھی تھی۔

دیکھا پلٹ کے ہمنے تھا چاہت اُسے بھی تھی۔
ہم جسکو چاہتے تھے محبت اُسے بھی تھی۔

جسکے انتظار میں راتیں گزار دی۔
راتوں میں جاگنے کی تو عادت اُسے بھی تھی۔

مجھ سے جدا ہوا تو رویا وہ زار زار۔
افشاں ھوا یہ راز ضرورت اُسے بھی تھی۔۔

34 Views
Like

Enjoy all the features of Sahityapedia on the latest Android app.

Install App
You may also like:
Loading...