Read/Present your poetry in Sahityapedia Poetry Open Mic on 30 January 2022.

Register Now
· Reading time: 1 minute

آرزو ساری ادھوری کی ادھُوری رہ گئی

آرزو ساری ادھوری کی ادھوری رہ گئ۔
رات بھر تھے ساتھ لیکِن بات ساری رہ گئی۔
❤️
میں نے سوچا تھا بتا دوں گا میں دل کی کیفیت۔
سامنے اس کے نہ کچھ بھی ہوشیاری رہ گئی۔
💝
کس کو کتنا کھیلنا ہے رب کو یہ معلوم ہے۔
سب کو لگتا ہے جوانی کی یہ پاری رہ گئی۔
❤️
جو سکوں ہے چین ہے راحت ہے جو آرام ہے۔
دل جگر سب دے دیا پھر بھی ادھاری رہ گئی۔
❤️
دل کے مندر کی وہ دیوی رہتی ہے دل میں میرے۔
کفر اور ایمان کی یہ جنگ جاری رہ گئی۔
💝

یہ جنون عشق لے آیا مجھے اس موڑ پر ۔
اب صغیر اپنی رہی وہ نہ ہماری رہے گئی۔
💝
درد کو دل میں چھپا کر ہنس رہے ہیں ہم صغیر۔
اب خوشی میں اور غم میں جنگ جاری رہ گئی۔
❤️💝💝❤️❤️❤️💝💝
ڈاکٹر صغیر احمد صدیقی خیرا بازار ضلع بہرائچ یو پی انڈیا

33 Views
Like

Enjoy all the features of Sahityapedia on the latest Android app.

Install App
You may also like:
Loading...